اپریل فول

aprilfoolday

اپریل فول کی ابتداء کیسے ہوئی
ابتداء اپریل فُول

کئی سو سال پہلے عیسائی افواج نے جب اسپین کو فتح کیا تو مسلمانوں کا بے دریغ خون بہایا کہ جب ان کے گھوڑے گلیوں سے گزرتے تو ان کے گھوڑوں کی ٹانگیں مسلمانوں کے خون میں ڈوبی ہوتیں جب عیسائیوں کو یقین ہو گیا کے اب مسلمان ختم ہو چکے ہیں تو انھوں نے مسلمان حکمرانوں کو اپنے خاندانوں کے ساتھ واپس مراکش چلے جانے کا موقع دیا جہاں سے ان کے آباواجداد آئے تھے  جب عیسائی افواج مسلمانوں کو اپنے ملک سے نکال چکیں تو حکومتی جاسوس گلی گلی گھومنے لگے کے ان مسلمانوں کا سراغ لگایا جا سکےجو شناخت بدل کر یہاں مقیم ہیں تاکہ ان کو بھی شہید کر دیا جائے
ان کو یقین تھا کے سارے مسلمان قتل نہیں ہوئے اب چھپے ہوئے مسلمانوں کو باہر نکالنے کی ترکیبیں سوچی جانے لگی پھر اعلان کروایا گیا کے جو مسلمان یہاں موجود ہیں وہ یکم اپریل کو غرناطہ میں جمع ہو جائیں تاکہ جہاں وہ جانا چاہیں ان کو بھیج دیا جائے
اب چونکہ امن قائم ہو چکا تھا  اور ہر طرح سے اطمینان بھی کروایا گیا چنانچہ مسلمانوں نے وہاں جمع ہونا شروع کر دیا حکومت نے خیموں کے شہر بسائے پورے مارچ اعلانات ہوتے رہے مسلمان جمع ہوتے رہے پھر یکم اپریل کا سیاہ دن آیا اور مسلمانوں کو منصوبے کے مطابق جہازوں میں بٹھایا گیا مسمانوں کو اپنا وطن چھوڑتے ہوئے تکلیف ہو رہی تھی لیکن اطمینان تھا کہ جان تو بچی دوسری طرف حکمران اپنے محلاّت میں جشن منانے لگے جرنیلوں نے مسلمانوں کو الوداع کہا اور جہاز چل پڑے ان مسلمانوں میں بوڑھے نوجوان عورتیں بچے مریض سب تھے جب جہاز گہرے سمندر میں پہنچا پھر وہی ہوا جو سانپ پر اعتماد کرنے والے کے ساتھ ہوتا ہے جہازوں کو گہرے سمندروں میں ڈبو دیا گیا اور مسلمان شہید ہو گئے اور اسپین میں جشن منایا گیا کہ واہ کیا بیوقوف بنایا مسلمانوں کو ہم نے*
?? آج جب ہم یہ دن ہم مناتے ہیں تو ان مسلمانوں کی روحوں کو کتنی تکلیف ہوتی ہو گئی کے ہمارے اپنے ہماری بربادی کے دن افسوس کی بجائے خوشیاں منا رہے ہیں

*حکم شرعی*
 
یہ دن منانا ناجائز ہے کیونکہ ایک تو مشابہت کفار دوسرا اس میں جھوٹ بولا جاتا ہے
جو کہ فعل حرام ہے
آقا کریم صلی اللّہ علیہ وسلم سے سوال  کیا  گیا
مومن زنا کرسکتا ہے فرمایا ہاں مومن زنا کرسکتا ہے پھر عرض کیا گیا کیا مومن چوری کر سکتا ہے فرمایا ہاں مومن چوری کر سکتا ہے پھر عرض کیاگیا کیا مومن جھوٹ بول سکتا ہے فرمایا نہیں مومن جھوٹ نہیں بول سکتا    

ان شاءاللّہ ہم نے خود بھی اپریل فول منانے سے بچنا ہے اور اپنے دوسرے مسلمان بھائیوں کو بھی بچانا ہے

3 thoughts on “اپریل فول”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *